Breaking News

’’اب میں آؤں کہ نہ آؤں؟‘‘ نواز شریف لندن میں ہر پاکستانی سے یہ کیوں پوچھ رہے ہیں؟

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) اب میں آؤں کہ نہ آؤں؟مسلم لیگ ن کے قائد نوازشریف نے لیگی رہنماؤں اور دوستوں سےوطن واپسی بارے حتمی رائے لینا شروع کردی۔ذرائع کے مطابق نوازشریف ملاقات کیلئے لندن میں ملاقات کے لئےآنے والوں سے اپنی وطن واپس کا سوال لازمی کرتے ہیں،وہ یہ پوچھتے بھی نظر آئے ۔

کہ مجھے بتایا جائے کہ میرے وطن واپس جانے سے فائدہ ہوگا یا نقصان؟وطن واپسی کی صورت میں پارٹی کو کتنا فائدہ ہو گا؟ کیا میرے آنے سے عمران خان کی مقبولیت کم ہوجائے گی؟ ذرائع کا بتانا ہے کہ ملاقاتیوں کی اکثریت نواز شریف کیوطن واپسی کی حامی نکلی، لیگی رہنماؤں کا کہنا تھا کہ آپ کے آنے سے ملک اور پارٹی کو فائدہ ہوگا،آپ ہی عمران خان کا بیانیہ ناکام اور مقبولیت کم کرسکتے ہیں۔ن لیگ کے اہم ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ میاں نواز شریف نے تمام ملاقاتیوں سے کہا کہ وطن واپسی بارے سنجیدگی سے سوچ رہا ہوں جلد فیصلہ کرلوں گا۔ دوسری جانب صحافی انصار عباسی اپنی ایک رپورٹ میں لکھتے ہیں ۔۔۔۔۔۔ عسکری حکام اس بات پر غور کر رہے ہیں کہ حکومت سے رابطہ کرکے شہباز گل کو ملٹری اسٹیبلشمنٹ کی تحویل میں دینے کی درخواست کی جائے تاکہ ان کا کورٹ مارشل کیا جاسکے۔ باخبر ذرائع کا کہنا ہے کہ جو کچھ بھی شہباز گل نے چند روز قبل کہا اس کے بعد عسکری حکام سنجیدگی سے اس آپشن پر غور کر رہے ہیں۔ فوج میں بغاوت پر اکسانے کا معاملہ انتہائی سنگین جرم ہے اور عسکری حلقوں میں اس بات پر غور کیا جا رہا ہے کہ ایسے جرم میں میں ملوث شخص کیخلاف آرمی ایکٹ کے تحت ملٹری کورٹ میں مقدمہ چلایا جانا چاہئے۔ ان ذرائع کا کہنا ہے کہ اگر دفاعی حکام نے یہ فیصلہ کرلیا تو وزارت دفاع کے توسط سے حکومت سے رابطہ کیا جائے گا تاکہ شہباز گل کو تحویل میں لے کر کورٹ مارشل کی کارروائی شروع کی جا سکے۔ حتمی فیصلہ سویلین حکومت کا ہوگا۔

About admin

Check Also

’میرا ڈیتھ سرٹیفکیٹ گم ہوگیاجسے ملے اطلاع کرے‘ ایک اشتہار جس نے ہرکسی کو حیران کردیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) قانونی دستاویزات گم ہونے کے اشتہاراخبارات میں آتے رہتے ہیں تاہم آپ …

Leave a Reply

Your email address will not be published.