حالات یکدم بدل گئے! پی ٹی آئی کو لاہور میں بڑا دھچکا لگ گیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) لاہور کا ضمنی الیکشن تحریک انصاف کے لئے درد سر بن گیا ہے۔ ریٹرننگ آفیسر نے مسلم لیگ ن (پی ایم ایل این) اور پیپلزپارٹی سمیت 11امیدواروں کو انتخابی نشانات الاٹ کردئیے جب کہ این اے 133 کیلئے حکمران جماعت کا انتخابی نشان کسی امیدوار کو الاٹ نہ ہو سکا۔

پی ٹی آئی کے جمشید اقبال چیمہ کا معاملہ ہائیکورٹ میں التوا کا شکار ہے۔ نجی ٹی وی ہم نیوز کے مطابق قومی اسمبلی کے حلقہ این اے133 میں ضمنی انتخاب کیلئے حکمران جماعت پی ٹی آئی کا انتخابی نشان کسی امیدوار کو الاٹ نہیں کیا جاسکا، کیونکہ تحریک انصاف کے جمشید اقبال چیمہ کا معاملہ ہائیکورٹ میں التوا کا شکار ہے۔اس کے علاوہ ریٹرننگ آفیسر نے مسلم لیگ ن اور پیپلزپارٹی سمیت 11 امیدواروں کو انتخابی نشانات الاٹ کردیے ہیں۔ این اے133 کیلئے مسلم لیگ ن کے امیدوار شائستہ پرویز ملک کو شیر کا نشان جبکہ پیپلزپارٹی کے امیدورا اسلم گل کو پارٹی انتخابی نشان تیر الاٹ کیا گیا ہے۔یاد رہے این اے133 میں انتخاب 5 دسمبر کو انتخاب ہوگا۔ یاد رہے 30 اکتوبر کو الیکشن کمشین نے این اے133ضمنی الیکشن کیلئے تحریک انصاف کے امیدوار جمشید اقبال چیمہ اور مسرت چیمہ کے کاغذات نامزدگی مسترد کردیے تھے، جمشید چیمہ کے کورننگ امیدوار مسرت چیمہ کے بھی کاغذات نامزدگی مسترد کردیے گئے، دونوں میاں بیوی کے تصدیق کنندہ کا تعلق متعلقہ حلقے سے نہیں ہے۔ریٹرننگ افسر کے مطابق جمشید اقبال چیمہ اور مسرت چیمہ کے تجویز کنندہ کا تعلق این اے 133 سے نہیں، جمشید اقبال چیمہ کا تجویز کنندہ ماڈل ٹاون کا رہائشی ہے۔الیکشن ایکٹ کے سیکشن 60 کے تحت تجویز کنندہ اور تائید کنندہ موجودہ حلقہ کا ہونا چاہیے، الیکشن رولز کے تحت جمشید اقبال چیمہ الیکشن لڑنے کے لیے نااہل ہیں۔

About admin

Check Also

اہم کیچ ڈراپ کرنے والے حسن علی کے والد کا ردعمل سامنے آ گیا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)واضح رہے کہ ورلڈ ٹی ٹونٹی کے دوسرے سیمی فائنل میں آسٹریلیا کے …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *