Breaking News

ٹریفک اہلکاروں سے بدتم،یزی کرنے والی خاتون کا تعلق کس سیاسی خاندان سے نکلا؟ تفصیلات سامنے آگئیں

اسلام آباد(نیوز ڈیسک) اسلام آباد میں ٹریفک اہلکاروں سے بدتم، یزی کرنے والی خاتون کا تعلق بااثر خاندان سے نکلا ہے۔ نجی ٹی وی نے دعویٰ کیا ہے کہ خاتون سینیٹر لیاقت ترکئی کی بھتیجی اور سینیٹر ذیشان خانزادہ کی سالی ہیں۔مذکورہ خاتون صوبائی وزیر کے پی کے شہرام ترکئی کی چچا زاد بہن بھی ہیں۔ پولیس تاحال خاتون کو گرفتار بھی نہیں کر سکی۔

یہاں واضح رہے کہ گذشتہ روز سوشل میڈیا پر ایک خاتون کی ویڈیو وائرل ہوئی تھی جس میں اُسے ٹریفک اہلکاروں کے ساتھ الجھتے ہوئے دیکھا جا سکتا تھا۔ذرائع کے مطابق ٹریفک اہلکاروں کی جانب سے فینسی نمبر پلیٹ والی گاڑیوں کے خلاف کارروائی عمل میں لائی جا رہی تھی کہ اس دوران خاتون سیخ پا ہو گئی۔ واقعہ سوشل میڈیا پر آیا توخاتون کے خلاف سخت ایکشن لینے کا مطالبہ کیا گیامذکورہ خاتون کے خلاف تھانہ کوہسار پولیس نے مقدمہ درج کیا گیا جس میں ہاتھا پائی اور پولیس اہلکار پر ح، ملہ آور ہونے کی ہدایات شامل ہیں تاہم پولیس حکام کی جانب سے خاتون کے خلاف درج مقدمے کو سیل کر دیا گیا تھا۔ سیل مقدمات کے ملزمان کو گرفتار نہیں کیا جا سکتا جو کہ بااثر خاتون کو تحفظ فراہم کرنے کا ہی طریقہ ہے۔جبکہ دوسری طرف چائے ہماری زندگی کا ایسا لازمی جزو بن چکی ہے کہ اکثر لوگوںکے لئے تو اس کے بغیر دن گزارنا تقریباً ناممکن ہوتا ہے۔ چائے کے کچھ فوائد تو ضرور ہیں، لیکن صرف اگر اس کا استعمال مناسب حد کے اندر کیاجائے۔ جیسے جیسے آپ چائے کا استعمال بڑھاتے جاتے ہیں تو اس کے نقصانات بھی سامنے آنا شروع ہو جاتے ہیں۔ لیکن افسوس کہ اس کے باوجود لوگ کثرت چائے نوشی کی عادت کو ترک نہیں کرتے۔ ٹائمز آف انڈیا کی ایک رپورٹ میں چائے کے کچھ ایسے ہی نقصانات کا تذکرہ کیا گیا ہے۔ ان میں سے ایک عام پائے جانے والے مسئلے کا ہم میں سے اکثر لوگوں کو سامنا کرنا پڑتا ہے۔ یہ مسئلہ نیند کی خرابی کی صورت میں ہم میں سے اکثر کے لئے پریشانی کا سبب بنتا ہے، جس کی بنیادی وجہ چائے میں پائی جانے والی کیفین ہے۔ اسی کی وجہ سے پیشاب کی حاجت بھی بکثرت محسوس ہونے لگتی ہے۔

About admin

Check Also

دنیا کی نظروں میں قبضہ مافیاکہلانے والاتاجی کھوکھر درحقیقت ایک کیسا انسان تھا

اسلام آباد(نیوز ڈیسک)اسلام آباد کی معروف کاروباری شخصیت اور سابق رکن قومی اسمبلی حاجی نواز …

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *